اقوام ممند خیل قبائل نے کمیشن اور کلاس فور بھرتیوں کا حق نہ ملنے کی صورت میں باران ڈیم ریزنگ منصوبے کا کام بند کرنے کی دھمکی دیدی

بنوں نیوز(عمران علی)اقوام ممند خیل قبائل نے باران ڈیم ریزنگ کے رائلٹی کیلئے 5دن کی ڈیڈ لائن دیدی اور مطالبہ تسلیم نہ ہونے کی صورت میں باران ڈیم ریزنگ کا کام بند کرنے اور علاقائی ذمہ داری سے دستبردار ہونے کی دھمکی دیدی اس سلسلے اقوام ممند خیل قبائل کا گرینڈ قومی جرگہ کرم گڑھی کے مقام پر زیر صدارت چیف آف ممند خیل قبائل ملک میر شمد خان منعقد ہوا جسمیں تمام شاخوں کے ملکان اور مشران نے شرکت کی جرگہ سے خطاب کرتے ہوئے پاکستان تحریک انصاف کے ممبر ڈسٹرکٹ کونسل ملک میر شمد خان،حاجی ملک شرغالی خان،امیر فیروز خان،ملک شاہ ولی خان ودیگر مشران اور ملکان نے کہا کہ انگریز دور سے ایک معاہدے کے تحت ممند خیل کی سرزمین پر ترقیاتی منصوبوں میں کلاس فور نوکریوں اور کمیشن کا حق ممند خیل قبائل کی تمام شاخوں کو ملتا ہے لیکن حالیہ باران ڈیم ریزنگ کے پانچ ارب روپے سے زائد کے منصوبے پر کام شروع کیا گیا ہے،جسمیں ممند خیل اقوام کی کروڑوں روپے مالیت کی زمینیں اور جائیدادیں آئی ہیں اور اس سلسلے میں حکومت نے نہ تو قوم کو اعتماد میں لیا ہے نہ ہی کسی قسم کا معاوضہ اور کمیشن دینے کی یقین دہانی کرائی گئی ہے مقررین نے کہا کہ باران ڈیم،ہیڈورکس اور بجلی گھر ہماری زمینوں پر بنے ہیں اور انگریز دور کے معاہدے کے تحت اسکے تحفظ کی علاقائی ذمہ داری ممند خیل قوم کی ہے یہی وجہ ہے کہ آج تک یہاں کسی قسم کا ناخوشگوار واقعہ پیش نہیں آیا ہے اور ایک دو واقعات کی سزا اور جرمانے بھی ممند خیل اقوام نے برداشت کئے ہیں مقررین نے کہا کہ باران ڈیم ریزنگ منصوبے کے سلسلے میں رائلٹی اور معاوضے بارے ہم نے آفسران کے ساتھ دو ملاقاتیں بھی کی ہیں اور یقین دہانی کرائی گئی تھی کہ ممند خیل اقوام کو کمیشن سمیت تمام حقوق دیئے جائیں گے لیکن آج تک نہ تو پولٹیکل انتظامیہ اور نہ ہی ڈپٹی کمشنر بنوں نے ممند خیل قوم سے رابطہ کیا ہے جبکہ باران ڈیم ریزنگ کا کام بھی شروع کردیا گیا ہے جس کا تمام تر فائدہ مروت اقوام،جانی خیل،بکاخیل اور میریان قوم کو ہوگا جبکہ ممند خیل اقوام کو ایک روپے کا فائدہ بھی نہیں اور کروڑوں روپے مالیت کی زمینیں ڈوب جائیں گی لہذا انہوں نے رائلٹی اور معاوضے سمیت تمام حقوق کیلئے پانچ دن کی ڈیڈ لائن دیتے ہوئے وفاقی اور صوبائی حکومت سے مطالبہ کیا کہ باران ڈیم ریزنگ کے سلسلے میں قوم کے مشران کو اعتماد میں لیکر نقصان کا معاوضہ اور رائلٹی کے تحت کمیشن اور کلاس فور بھرتیوں کا حق دیا جائے بصورت دیگر ڈیڈ لائن کے خاتمے پر دوبارہ بڑا قومی جرگہ منعقد کیا جائیگا جسمیں باران ڈیم پر کام بند کرنے اورآئندہ کے احتجاجی تحریک کیلئے لائحہ عمل ترتیب دیا جائیگا۔