ایم پی اے ملک شاہ محمد خان کا جانی خیل بجلی مسائل حل اور سڑکوں کی تعمیر کا اعلان

بنوں نیوز(عمران علی)پاکستان تحریک انصاف کے ایم پی اے ملک شاہ محمد خان کے ساتھ جانی خیل ،علی خیل کے مشران نے ملک مویز خان کی سربراہی میں بجلی مسائل اور سڑکوں کے حوالے سے جرگہ کیا جرگہ سے خطاب کرتے ہوئے تحریک انصاف کے ایم پی ملک شاہ محمد خان نے کہا کہ عوام کی بلا امتیاز خدمت اور پسماندہ علاقوں کے عوام کو بنیادی سہولیات کی فراہمی ہماری سیاست کا مخور ہے ماضی میں بھی پی کے89سے عوام نے ایم پی ایز منتخب کئے جنکی پارٹیوں کی مرکز اور صوبوں میں حکومتیں تھیں لیکن اس حلقہ کے عوام کیلئے ترقیاتی کام نہیں کئے اور پانچ سال تک عوام کو اپنی صورت تک نہیں دکھائی لیکن قوم سے میرا وعدہ ہے کہ حقوق گھر کی دہلیز پر پہنچاءوں گا اور جب بھی قوم مشکل میں ہوگی ہم قوم کے ساتھ میدان میں ہوں گے جانی خیل علی خیل مچی خیل ،جانی خیل بجلی فیڈر مکمل کرنے کیلئے ملک مویز خان کے ذریعے میٹریل پہنچایا ہے اور جو کام باقی ہے وہ بھی میں پورا کروں گا انہوں نے کہا کہ بکاخیل فیڈر منظور روایا ہے اور عنقریب عوام کو خوشخبری دیں گے جس سے متعلقہ علاقوں کو بجلی فیڈرز فراہم کریں گے 40کروڑ روپے کی لاگت سے جانی خیل ہندی خیل سڑک مکمل ہوگی، جانی خیل کیلئے مختلف سیکٹرز میں سکی میں منظور کروائی ہیں کچھ وقت ضرور لگے لیکن ان سکیموں کی تکمیل سے قوم کے بنیادی مسائل حل ہوں گے میریان جانی خیل روڈ کالونی تک،باران ڈیم سے مروت کینال کے رراستے جانی خیل تک،نرمی خیل سے ولی نور تک اور روچہ سے ولی نور تک سڑک مکمل کریں گے نالہ شکتو سے جانی خیل روڈ پر بڑا پل منظور کیا ہے جس کے ٹینڈر عنقریب اخبارات میں لگ جائیں گے ،روچہ ،سین تانگہ فیدرز چالو کئے ہیں اور جو چیزیں کم ہوں گی وہ بھی ہم پوری کریں گے ۔ انہوں نے جانی خیل قوم کے مشران سے اپیل کی کہ وہ سیاسی پروپیگنڈوں ر دھیان نہ دیں اور جو بھی قومی مسئلہ ہو میرے علم میں لائیں میرے نزدیک بکاخیل،جانی خیل،میریان یا کسی بھی قوم میں کوئی فرق نہیں نہ صرف پی کے89کے عوام کی خدمت اپنا فرض سمجھتا ہوں بلکہ پورے بنوں کے عوام کی خدمت میرا فرض ہے چاہے کسی نے ووٹ دیئے ہیں یا نہیں آج اللہ تعالیٰ نے مجھے خدمت کا موقع دیا ہے اور میں قوم کا حاکم نہیں بلکہ قوم کا خادم ہوں قبل ازیں ملک مویز خان اور جرگہ مشران نے ایم پی اے ملک شاہ محمد خان کا شکریہ ادا کیا اور انہیں اپنے علاقہ کے مسائل سے آگاہ کیا ۔