بجٹ اجلاس کے دوران اپوزیشن اور حکومتی ممبران نے اراکین کونسل کے45فیصد فنڈز نہ ملنے کے خلاف واک اوٹ کیا

بنوں(عمران علی)بجٹ اجلاس کے دوران اپوزیشن اور حکومتی ممبران نے اراکین کونسل کے45فیصد فنڈز نہ ملنے کے خلاف واک اوٹ کیا جسکے بعد اے ڈی لوکل گورنمنٹ اور متعلقہ حکام کی جانب سے مسئلے کے حل کی یقین دہانی پر اراکین دوبارہ ایوان میں واپس آگئے اس دوران بجٹ اجلاس سے خطاب کرت ہوئے ڈسٹرکٹ ممبر ملک شکیل خان نے قرارداد کے ذریعے بنوں کے منتخب نمائندوں اور صوبائی حکومت سے مطالبہ کیا کہ عمرہ پر جانے کیلئے انگوٹھے کی تصدیق کیلئے مردوخواتین کو پشاور جانا پڑتا ہے جسمیں کافی وقت بھی ضائع ہوتا ہے اور خرچہ بھی ہوتا ہے لہذا انگوٹھے کی تصدیق کیلئے بنوں میں ہی دفتر کا انتظام کیا جائے جبکہ محکمہ تعلیم کی جانب سے بھرتیوں اور منصوبوں کے حوالے سے وضاحت کی جائے کہ ایجوکیشن چیئر مین سمیت کسی ڈسٹرکٹ ممبر کو اب تک اعتماد میں لیا گیا ہے ہا نہٰن اسی طرح سپورٹس فنڈز کی تفصیلات بھی ریجنل سپورٹس آفیسر دیں کہ ڈسٹرکٹ ممبران کو کتنا سپورٹس فنڈ ملتا ہے اور ریجنل سپورٹس آفیسر نے کس کو کتنا فنڈدیا ہے اور کس طرح اور کس نے خرچ کیا ہے اجلاس سے ڈسٹرکٹ ممبران ملک حشمت علی خان،حلیم زادہ وزیر،ملک زہیب خان،سید کمال شاہ،ملک شیر علی باز،ولی آیاز ایڈوکیٹ،وحید خان،عبدالرزاق خان،حامد خان،پیر عبدالرحمن شاہ،عالمگیر خاضر نواز خان اور دیگر اراکین نے بھی اظہار خیال کیا اراکین نے کہا کہ ضلع ناظم اور نائب ناظم کی جانب سے تین سالوں میں صرف11اجلاس بلائے گئے یہی وجہ ہے کہ عوام کے مسائل بھی حل نہیں ہوئے اور سرکاری محکموں کے سربراہان بھی اراکین کونسل کی قراردادوں پر عمل نہیں کرتے ہیں آج خوشی کا دن ہے کہ اپوزیشن اور حکومتی اراکین خوشگوار ماخول میں بجٹ پیش کررہے ہیں ۔اجالس میں ککی کے ڈسرکٹ ممبر پیر خان بادشاہ،ملک یاسر خان،مس نادیہ خان،ملک شیر بہادر خان،ملک عصمت اللہ خان آمندی،زعفران خان،شاہد خان سمیت دیگر اراکین کنسل ار سرکاری محکموں کے سرراہان ار مائندے بھی شریک تھے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں