(بی بی سی) پشاور میں مسجد کے اندر دھماکہ، کم از کم سات افراد شہید، 70 سے زیادہ زخمی

(بی بی سی) پاکستان کے صوبہ خیبر پختونخوا کے دارالحکومت پشاور میں ایک مسجد کے اندر ہونے والے دھماکے میں کم از کم سات افراد شہید اور درجنوں زخمی ہو گئے ہیں-
یکہ توت پولیس تھانے کے اہلکار نے بتایا کہ یہ دھماکہ پشاور کی دیر کالونی میں واقع سپین جماعت نامی مسجد و مدرسے میں ہوا ہے۔ پولیس کا کہنا ہے کہ دھماکہ اس وقت ہوا جب صبح آٹھ بجے مدرسہ میں درس و تدریس کا عمل جاری تھا۔ پولیس حکام کے مطابق ابتدائی طور پر یہی معلوم ہوا ہے کہ دھماکہ خیز مواد کسی بیگ میں رکھا گیا تھا۔ ریسکیو 1122 کے ترجمان بلال فیضی کے مطابق دھماکے کے مقام پر گڑھا پڑا ہوا ہے۔ خیبر پختونخوا کے صوبائی وزیر تیمور جھگڑا نے صحافیوں سے بات کرتے ہوئے اس دھماکے میں سات افراد کی شہادت کی تصدیق کی ہے جبکہ ان کا کہنا تھا کہ 70 زخمیوں کو جائے وقوعہ سے لیڈی ریڈنگ ہسپتال منتقل کیا گیا ہے۔
ان کا کہنا تھا کہ زخمیوں میں بچے بھی شامل ہیں جبکہ کچھ زخمیوں کو دیگر ہسپتالوں میں بھی لے جایا گیا ہے۔ صوبائی وزیر کا کہنا تھا کہ اس وقت مکمل توجہ زخمیوں کو علاج معالجے کی بہتر سہولیات کی فراہمی پر ہے
لیڈی ریڈنگ ہسپتال کے ترجمان محمد عاصم نے ایک بیان میں بتایا ہے کہ جو لاشیں اور زخمی ہسپتال لائے گئے ہیں ان میں بیشتر کے جسم جلے ہوئے ہیں اور جسم میں چھرے بھی موجود ہیں۔