جانی خیل میں انٹر نیٹ سروس بحال،عوام کو راشن اور امدادی پیکج میں محروم نہ کیا جائے،ملک مویز خان جانی خیل

بنوں نیوز(عمران علی)بنوں کا دور افتادہ علاقہ جانی خیل پہلے ہی فوجی اپریشنوں کی وجہ سے مشکلات سے دوچار ہے اور اس پسماندہ علاقہ کے عوام آج کے اس جدید دور میں بھی بنیادہی سہولیات سے محروم ہیں قاتل وائرس کورونا کی وجہ سے یہاں کے عوام کی مشکلات مذید بڑھ گئی ہے عوام کا بنوں شہر آنا جانا ب ند ہونے اور انٹر نیٹ سروس بند ہونے کی وجہ سے یہاں کے عوام دنیا سے کٹ گئے ہیں ان خیالات کا اظہار پاکستان تحریک انصاف ایف آر بنوں کے سابق صدر اور معروف قبائلی رہنما ملک مویز خان نے میڈیا کے نمائندوں سے خصوصی بات چیت کرتے ہوئے کیا انہوں نے کہا کہ جانی خیل میں انٹر نیٹ سروس بند ہونے کی وجہ سے ہزاروں عوام ملکی اور بین الاقوامی خالات جاننے سے محروم ہیں لہذا حکومت فوری طور پر جانی خیل میں انٹر نیٹ سروس بحال کرکے جانی خیل،بکاخیل اور دیگر ملحقہ علاقوں کے عوام کو وزیر اعظم ریلیف پیکج میں شامل کریں یہاں کے ہسپتالوں میں تمام سہولیات فراہم کریں ،پانی،بجلی اور سڑکوں کی ضروریات پوری کریں جن علاقوں میں پانی جمع ہوتا ہے اور بارش کی صورت میں عوام کا بنوں شہر آنا جانا مشکل ہوجاتا ہے ان علاقوں میں پل اور رابطہ سڑکیں تعمیر کرکے عوام کی مشکلات کا ازالہ کیا جائے کیونکہ پہلے ہی فوجی اپریشنوں کی وجہ سے یہاں کاروبار بند ہیں تعلیم اور صحت کی سہولیات کا فقدان ہے اور بیروزگاری عام ہے لہذا وزیر اعظم عمران خان،وزیر اعلیٰ محمود خان اور ڈپٹی کمشنر بنوں سے مطالبہ کیا کہ جانی خیل اور بکاخیل کے عوام چونکہ انتہائی غریب ہیں لہذا غیر سرکاری تنظیموں کی جانب سے جو امداد آتی ہے ان میں بھی ان عوام کا حصہ کیا جائے اور مرکزی اور صوبائی حکومتوں کی جانب سے پیکج میں یہاں کے غیرب عوام کو نظر انداز نہ کیا جائے ۔