کرپشن صرف پیسوں کی نہیں ہوتی ہے بلکہ فراءض سے غفلت برتنا اور میرٹ کے خلاف کام کرنا بھی کرپشن کے زمرے میں آتا ہے،اسسٹنٹ کمشنرشوذب عباس

بنوں نیوز(عمران علی)اسسٹنٹ کمشنر بنوں شوذب عباس نے کہا ہے کہ کرپشن صرف پیسوں کی نہیں ہوتی ہے بلکہ فراءض سے غفلت برتنا اور میرٹ کے خلاف کام کرنا بھی کرپشن کے زمرے میں آتا ہے ۔ بد قسمتی سے آج کے دور میں بد عنوانی کو حق تصور کیا جاتا ہے، اسے بُرائی اور جُرم سمجھا ہی نہیں جاتا ۔ اور ہ میں افسوس سے کہنا پڑتا ہے کہ کرپشن کے حوالے سے ہمارے ملک کا شمار ان ممالک میں ہوتا ہے جو کہ کرپشن کے حوالے سے ٹاپ پر ہیں ۔ ہمارے ملک میں ہر جائز و ناجائز کام کروانے کے لیے رشوت دینے کا عمل اپنی جڑیں مضبوط کرچکا ہے ۔ رشوت کو حق جبکہ ملاوٹ کو کاروبار سمجھ لیا گیا ہے، اسی لئے ان جڑوں کو کاٹنے کی اشد ضرورت ہے ۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے انسداد بدعنوانی کا عالمی دن(ورلڈ کرپشن ڈے)کے سلسلے میں منعقدہ واک اور سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے کیا سیمینار میں ایڈیشنل اسسٹنٹ کمشنر عمر خطاب خان،ریلیف اسسٹنٹ صابر خان سمیت مختلف سرکاری محکموں کے سربراہان اور نمائندوں نے شرکت کی اپنے خطاب میں اسسٹنٹ کمشنر شوذب عباس نے مذید کہا کہ جب تک محکمہ کا ہیڈ کرپٹ نہیں ہوتا ماتحت عملہ کرپشن کا تصور بھی نہیں کرسکتا ،بدعنوانی کے بڑھتے ہوئے اس ناسور کی ایک بڑی وجہ یہ ہے کہ اب لوگ بدعنوانی کے مرتکب ہو کر بھی شرمندگی محسوس نہیں کرتے بلکہ اس پر فخر کرتے ہیں بلکہ اسے عقلمندی،عیاری،چالاکی،ذہانت اورہنر سمجھتے ہیں ۔ ملک میں کر پشن اور نا انصافی کے خاتمہ اور ہر کام میرٹ کے مطابق چلانے کے لیے ضروری ہے کہ عوام میں بڑھتی ہوئی ما یوسی اور نا امیدی کا خاتمہ کرتے ہوئے قانون کی حکمرانی کو یقینی بنایا جائے ۔ انہوں نے کہا کہ اگر ہم اداروں میں میرٹ کو فروغ دیں ، رشوت ستانی کا خاتمہ کرنے کی کوشش کریں ،انصاف کی بات کریں ، ملکی مفاد کو ذاتی اور انفرادی مفاد پر ترجیح دیں ، سفارشی کلچر کا خاتمہ کریں ، امیری اور غریبی کے فرق کو مٹانے کے لیے کلیدی کردار ادا کریں ، ٹیکس چوری، قرضے معافی اور بجلی چوری جیسے اقدامات سے گریز کریں تو تب ہی حقیقی طور پر پاکستان ترقی کی راہ پر گامزن اور ہر پاکستانی خوشحال ہوگا ۔ لیکن اس کے لیے ہ میں خواب غفلت سے بیدار ہونا ہوگا ۔